Wednesday, 16 August 2017

Seed

ایک بیج کا عظیم ترین اظہار اس کہ مکمّل طور پر کھل جانے میں ہوتا ہے جب اس کا خول ٹوٹ جاتا ہے اور سب کچھ باہر آجاتا ہے اور مکمّل بدل کر ایک تن آور درخت بن جاتا ہے،  جولوگ بالیدگی اور ترقی کر کرکے  بڑےہونے  اور تن آور ہو کر بڑا ہو جانے کا مطلب نہیں جانتے وہ بیج کہ اس عمل کو اس کی مکمّل تباہی ہی کہتے ہیں
For a seed to achieve its greatest expression, it must come completely undone. The shell cracks, its insides come out and everything changes. To someone who doesn't understand growth, it would look like complete destruction - Cynthya Occelli

Omnibus

Tuesday, 15 August 2017

Our lives

ہماری زندگی کا خاتمہ ہونے لگتا ہے جب ہم بولنے کی جگہ پر چپ سادھ کہ بیٹھ جاتے ہیں
"Our lives begin to end the day we become silent about things that matter." - Martin Luther King, Jr. 

Omnibus


Saturday, 22 July 2017

ایسا کیوں ہے؟

ایسا کیوں ہے کہ ، ہمیشہ سب کچھ  ویسے ہی کیا جانا چاہیے جیسے کیا جاتا ہے یا جیسے آج تک کیا جاتا رہا ہے ؟
یہ کیوں ضروری ہے کہ روز صبح اٹھ کر تیار ہو کر گھر سے نکل کر کام پر جاؤ؟ کیا کام پر جانے سے ہی پیسے کمانے کا مقصد پورا ہوتا ہے ہے؟
یا پھر روز صبح اسکول کالج جانے سے ہی انسان.. انسان بنتے ہیں ؟ کیا جو لوگ کبھی اسکول نہیں جاتے وہ انسان نہیں ہوتے؟ یا انسان نہیں بن پاتے

کیا لائن میں لگ کے ٹکٹ لینا بل جمع کروانا ضروری ہے ؟ کیونکہ ، سب ایسے کہتے ہیں ؟ یا یہی سہی طریقہ ہے؟ کبھی کسی لیڈر کو لائن میں لگے دیکھا ہے؟ ان کے بل کیسے جمع ہوتے ہیں ؟ ٹکٹ کیسے ملتے ہیں ان کو؟
ٹریفک کے اصول کی پابندی لازمی کیوں ہے ؟ سرخ بتی پے رک جانا سبز پر چل پڑنا ہمیشہ زیبرا کراسنگ سے سڑک پار کرنا کیوں ضروری ہے؟
کبھی کسی لیڈر کو دیکھا سرخ بتی پے؟ یا زیبرا کراسنگ پے؟

جتنے بھی ہیرو یا لیڈرز ہیں وہ عام زندگی کیوں نہیں گزارتے؟
ہم جانتے ہیں وہ ایسا نہیں کرتے نہ کر سکتے ہیں وہ مختلف ہیں تبھی ہیرو ہیں یا لیڈر ہیں اور دنیا انکو تسلیم کرتی ہے مگر سبق کچھ اور بن جانے کا دیتی ہے

اچھا شہری ، اچھا محنتی انسان جو وقت پے جاگے  اسکول جاتا ہو پورے ٨ گھنٹے کام پے رہے اسکول کے سارے پیریڈ پڑھے کام کرے تو جتنا کام ملے جو حکم ملے بجا لاے

حکم دینے والا کام دینے والا نہ بنے نہ ایسا بننے کا سوچے اگر ایسا کرے تو بغاوت سر کشی مگر یہی لوگ فلم دیکھتے ہے کوئی کہانی سنتے ہے ہیرو کی بغاوت پے تالیاں اور سیٹیاں بجا رہے ہوتے ہیں

لیکن بس فلم کی حد تک کہانی کی حد تک یا کسی بہت اچھی تقریر کی حد تک کبھی یہ نہیں سوچتے کہ میں خود اس جگہ کیوں نہیں میں وہ تقریر کیوں نہیں کر سکتا؟ میں وہ ہیرو کیوں نہیں ہو سکتا ؟
صرف اس لئے کہ میں تو عوام میں سے ہوں میرا کام تو لائن میں لگنا ہے انتظار کرنا کام کرنا ہے
ہینا؟

ہم دیسی

ہم دیسی لوگ مرچیں پسند کرنے والے لوگ ہیں
مرچیں کھانا کھلانا ار لگانا ہمارا پسندیدہ مشغلہ ہوتا ہے
چاہے جگت میں ہو شغل میں یا ہانڈی میں 

درد سے پیار تکلیف میں مزہ لینے والے عجیب سے لوگ
ہمیں درد بھرے گانے اچھے لگتے ہیں سوز و گداس سے پیار ہے
سریلا پن اچھا لگتا ہے جو سوز کے بنا آ ہی نہیں سکتا
کبھی بارش میں اپنی چھتری دوسرے کو دے دیتے ہیں اور
 کبھی بلکل نۓ پیکٹ میں پرانی چیز بیچ دیتے ہیں

ہم ابھی گاڑی چلانا سیکھ رہے ہیں تھوڑے اناڑی ہیں اور تھوڑے کھلاڑی
رک رک کہ کبھی تیزی سے چلتی ہے ہماری زندگی کی گاڑی

بہت مزے سے زندگی کی اس رک رک کے چلتی گاڑی کو کبھی دھکّےتو کبھی جگاڑ سے چلاتے ہیں کیونکہ چلتی کا نام ہی تو گاڑی ہے

ہمیں سمجھنا آسان نہیں اور جتنا سمجھ آتی جاتی ہے اتنی حیرانگی ہوتی جاتی ہے عجیب ہیں ہم لوگ ہمیں دل سے سمجھنا پڑتا ہے دماغ بیچارہ تو بس ہمیں جاہل گنوار اور وحشی کہتا ہے

عجیب الٹی سیدھی سی یہ زندگی ہماری تھوڑی سچائی تھوڑی نادانی اور تھوڑی بےایمانی سے بنی ہے
آنسو اور کچھ سپنے دونوں ہی مل جاتے ہیں ایک ساتھ ہماری آنکھوں میں کیونکہ دونوں ہی اپنے ہیں
اور ان کے ساتھ تھوڑی مجبوریاں  ہیں اور من مانیاں بھی ہم ان کہ بنا بھی نہیں رہ سکتے مجبور چاہے جتنے بھی ہوں من مانیاں سے نہیں رہ سکتے

ہم دیسی لوگ تو تو ..میں میں بھی بہت کرتے ہیں اور بہت سی باتیں ہم میں دیوانوں جیسی ہیں
ہمیں ویلیتی لوگ اسی لیے کبھی سممجھ نہیں سکے بیچارے ہم پر اپنی منطق آزماتے ہیں دماغ لڑاتے ہیں اور ہم تو دماغ اور
منطق سے باہر کہ لوگ ہیں



مگر کب تک؟ ہم دیسی بھی بہت ، شوق سے ویلیتی بنتے ہیں، پتہ نہیں کیوں دل کی چھوڑ کہ دماغ کی سننے لگتے ہیں ، اپنے سارے طور طریقے بدلتے ہیں کہیں سے دیسی نہ نظر آئیں مگر بن نہیں پاتے کہیں نہ کہیں کسی نہ کسی کونے سے دیسی پنا کبھی نہ کبھی ضرور جھلک جاتا ہے جیسے وہ خواجہ سرا ہوتے ہیں نہ بس ویسے ہی

Thursday, 20 July 2017

Dead and the Alive

تجسس ، خاص طور پر دانشورانہ فکر اور استفسار ان لوگوں کو ایک دوسرے سے الگ کرتا ہے جو زندہ ہیں اور جو صرف زندہ دکھائی دیتے ہیں اپنے جسم کی حرکت کی وجہ سے - ٹام روببینز
Curiosity, especially intellectual inquisitiveness, is what separates the truly alive from those who are merely going through the motions.-Tom Robbins 

Omnibus

Saturday, 8 July 2017

Trust the physician

درد اور تکلیف  ذات کا خول توڑکر سمجھادری میں اضافہ کرتی ہے یہ ایک کڑوی زہر دوا ہے جس سے آپ کہ اندر کا معالج آپ کہ روحانی طور پر  بیمار وجود کا علاج کرتا ہے - اپنے معالج پر بھروسہ کرو اور چپ چاپ سکون سے علاج کرواتے جاؤ - خلیل جبران
Your pain is the breaking of the shell that encloses your understanding. It is the bitter potion by which the physician within you heals your sick self, so therefore, trust the physician and drink his remedy in silence and tranquillity. - Khalil Gibran

Omnibus

Ego Traps

Omnibus

Friday, 30 June 2017

اندر کا جانور

ہم جتنی بھی ترقی کر جائیں  اندر کے گہرائیوں میں ہم ابھی تک ایک جانور ہیں جانور جو انسان نظر آنے کی کوشش میں ہر وقت کوشاں رہتا ہے مگر صرف نظر آنے کے لیۓ ..........انسان بننے کے لئے نہیں 

ایسا کیوں ہے ؟ ہم صرف انسان نظر آنے کی کوشش میں کیوں  لگے رہتے ہیں؟ انسان بنتے کیوں نہیں ؟ یہ بات ہم اکثر بھول جاتے ہیں کہ اندر کی گہرائیوں میں ہم ایک جانور ہیں جو یاد رکھنی چاہیے اس کی اہمیت اس بات سے کہیں زیادہ ہے کہ ہم انسان نظر آنے کی کوشش کریں انسان بن جانا اس بات پر ہی منحصر ہے کہ ہم یاد رکھیں کہ اندر سے ہم ایک جانور ہیں جسے انسان بن جانے کا کام دیا گیا ہے صرف انسان نظر انے کا نہیں 

لیکن ہم اس بات کو کیسے یاد رکھ سکتے ہیں جب ہم اپنی بجاے دوسروں کے اندر کا جانور تلاش کرنے میں زیادہ وقت صرف کرتے ہیں وہ بھی بس اس لئے کہ ہمارے اندر کے جانور سے لوگوں کا دھیان بٹا رہے جو ایک ناکام کوشش ہے ہم کتنی بھی کوشش کر لیں ہمارے اندر کا جانور کہیں نہ کہیں سے اپنی جھلک ضرور دکھا دیتا ہے کیونکہ جب تک وہ ہے وہ چین سے نہیں بیٹھے گا- جانور تو ہر وقت اچھل کود اور خرابی پیدا کرنے میں لگا رہتا ہے اس لئے اسے کابو نہ کیا گیا
سدھارا نہ گیا تو کبھی نہ کبھی کہیں نہ کہیں یہ خود کو ظاہر کر دے گے

ہمیں دوسروں کے اندر کا جانور نمایاں کرنے میں مزہ آتا ہے مگر صرف وہاں جہاں ایسا کرنا فائدہ مند ہو نقصان دہ نہیں - ہم وہاں ایسی  کوشش کرنے کی جرّت کبھی نہیں کرتے جہاں ایسا کرنے سے نقصان کا ذرا بھی اندیشہ ہو - ایسی  جگہ ہم چپ چاپ با ادب اور فرمانبردار نظر انے کی کوشش کرتے ہیں کیونکے اگر یہاں کچھ کیا تو نہ صرف نقصان کا اندیشہ ہے بلکہ اپنے اندر کا جانور بھی ظاہر ہونے کا خدشہ ہو سکتا ہے 

ہم صرف کسی کونے میں الگ تھلگ یا ایسے جگہ دوسروں کہ جانور نمایاں کرنے کی کوشش کرتے ہیں جہاں اپنے جیسے اور لوگ ہونے کا یقین ہو اور خوب لطف اندوز ہوتے ہیں یہ سب کر کے لیکن چہرے پر ظاہر نہیں ہونے دیتے کہ اندر سے بہت لطف اندوز ہو رہے ہیں چہرے پر فکر دکھ یا محبّت ظاہر کرتے ہے  اس کہ لئے جس کے اندر کا جانور دوسروں پے ظاہر کر رہے ہوتے ہیں 

اگر ہمیں واقعی فکر ہو کسی کے اندر کے جانور کے ختم کر دینے کی تو پہلے اپنے جانور کی فکر تو کریں جس  کو ہم اکثر بھول ہی جاتے ہیں اور وہ کبھی کبھی دھیان نہ رکھنے کی وجہ سے یا تو مر جاتا ہے اور اس کی بو سے سارا ماحول خراب ہونے لگتا ہے یا بلکل بی نہ سدھاے جانے سے اتنا زیادہ بے کابو ہو جاتا ہے کے ہاتھ سے نکل جاتا ہے  یا پھر وہاں تک اس فکر کو پونھچائیں جہاں کوئی مثبت نتیجہ ملنے کا امکان بھی ہو 

تو دوستو اپنے اندر کے جانور کو مت بھولو اس کی فکر کرو اس کو انسان بناؤ دوسروں کو رہنے دو  کیونکے دوسروں کو انسان بنانے کے قابل صرف اور صرف تب بن سکو گے جب خود بن جاؤ گے ایک انسان جو صرف انسان نظر انے کی کوشش نہیں کرتا انسان ہوتا ہے 

Sunday, 25 June 2017

Trying to be ?

تم دنیا پر ، دنیا دار بن کہ... کبھی اثر انداز نہیں ہو پاؤ گے
you will never influence the world by trying to be like it

Ominbus

Saturday, 17 June 2017

Pious and the Fools

Only the pious, and the fools are brave.- Omnibus

نیک یا پھر بے وقوف ہی بہادرلوگ ہوتے ہیں  

Omnibus

Thursday, 15 June 2017

Pain

درد صرف تمہیں مرد بنا دینے کہ لئے آتا ہے 

Pain is nothing but to make a man out of you - Omnibus


Monday, 5 June 2017

Trips


کوئی پہاڑ سے ٹھوکرکھا کہ نہیں گرتا
ٹھوکر ہمیشہ پتھروں سے لگتی ہے
راستہ کہ تمام پتھروں سے گزر آؤ گے تو پتا چلے گا کہ ایک پہاڑ سر کر کہ آئے ہو
Nobody trips over mountains. It is the small pebble that causes you to stumble. Pass all the pebbles in your path and you will find that you have crossed the mountain. Unknown 

Omnibus

Tuesday, 16 May 2017

دائمی اطمینان


مجھے دعا ملی، الله خوش رکھے
میں نے کہا الله آپ کو بھی خوش رکھے
لیکن مجھے تو خوشی نہیں چائیے
تھوڑی حیرانگی سے سوال کیا گیا
وہ کیوں؟
بھلا خوشی کس کو نہیں چاہیے ہوتی
 مجھے تو بس اطمینان چاہیے .....میں نے جواب دیا
کیونکہ خوشی بھی اطمینان کا ہی ایک جزو ہے
اور اطمینان کل
یاد رکھو جس کام، جگہ ، چیز یا تعلق میں دائمی اطمینان نہیں وہ سہی نہیں
عارضی سکوں ، قرار تو اکثر مل جاتا ہے مگر یہ سب عارضی ہوتا ہے جس کے بعد وہی اضطراب ..
دائمی تو بس اطمینان ہوتا ہے
اور اطمینان حاصل ہوتا ہے تو  بس بابوں سے، قربان میں اپنے سب بابوں پہ
الحَمْد لله 

                                                                          Omnibus

Saturday, 13 May 2017

دنیاوی مخلوق

دنیا کا یہ اصول ہے کہ جہاں آپ کچھ دینے کے لیے جائیں جہاں آپ کا نوازنے والا ہاتھ ہویا جہاں آپ مالک ہوں بڑےہوں - وہاں کہ لوگ آپ کے مطابق اپنے آپ کو ڈھالیں کیونکے آپ ان کو نوازنے لگے ہیں .. وہ نہیں

آپ صرف اس جگہ خود کو دوسروں کے حساب سے ڈھالنے کی کوشش کرتے ہیں جہاں سے آپ کو کچھ حاصل ہونے کی امید ہوتی ہے یا کچھ فائدہ - جیسے ملازمت یا کاروبار یا کسی خدمت کے بدلے میں کوئی انعام یا تعریف یا ترقی

اور اگر ایسا نہ ہو کہ نہ ہو یعنی لوگ آپ کے مطابق خود کو نہ ڈھال سکیں اس کہ با وجود کے دینے والا ہاتھ آپ کا ہے آپ مالک ہیں تو آپ وہ جگہ چھوڑ دیتے ہیں یا لوگوں کو وہاں سے چلے جانے پر مجبور کر دیتے ہیں

دوسری طرف اگر آپ کو کہیں کوئی فائدہ نظر نہ آے اور کچھ ملنے کی امید نہ ہو تو آپ وہاں جانا پسند نہیں کرتے اور مجبوراً جانا پڑ بھی جاے تو خود کو وہاں کے مطابق کبھی نہیں ڈھالتے با مجبوراً جتنا ہو سکے ڈھل جانے والا لبادہ اوڑھ لیتے ہیں اداکاری کرتے ہیں 


مگر یہ سب اصول تو دنیا کے اصول ہیں کیا آپ دنیاوی مخلوق ہیں جو کبھی کبھی روحانی تجربات سے گزرتی ہے؟ یا پھر آپ اصل میں روحانی مخلوق ہیں جو دنیاوی تجربے سے گزر رہی ہے؟ فیصلہ آپ خود کریں

کبھی خود کو ان کے مطابق ڈھالنے کی کوشش کی جہاں آپ کچھ دینے والے ہیں اور فائدہ پونھچانے آے ہیں ؟ یا کبھی اس جگہ بھی گئے جہاں سے کوئی فائدہ ملنے کی امید نظر نہ آتی ہو ؟ یا اگر گئے بھی تو وہاں جا کر خود کو وہاں کے مطابق ڈھالنے کا سوچا ؟

اصل انسان تو وہ ہے جو اس جگہ ضرور جاے جہاں کوئی فائدہ نظر نہ آتا ہو اور اس انسان کو ضرور عزت دے جس سے اسے کسی فائدے کی امید نہ ہو - عزت دینا یہ نہیں ہوتا کے آپ کسی سے اس طرح ملنے گئے جیسے احسان کیا ہو اور جا اکر نخرے دکھاتے رہے کہ اف کتنی گرمی ہے ٹائم بہت کم ہے صاحب بنے بیٹھے رہے - عزت دینا یہ ہوتا ہے کہ کوئی شخص خود کو آپ کے سامنے چھوٹا محسوس نہ کرے گھل مل جانا ویسا ہی نظر آنا جیسے وہ سب ہیں یہاں تو آپ کو جب تک الگ سے کوئی کرسی یا اسٹیج نہ ملے تو کسی کو ملنے نہیں جاتے

آپ کو تو دوسروں سے الگ ممتاز نظر آنا چاہیے نہ - تا کہ پتا لگے سب کو کہ آپ نے عزت بخشی ہے اور اگر کوئی ایسا نہ کرتا ہو لوگوں میں رچ بس جاتا ہو سادہ پرخلوص واقعی نظر انے لگے تو شک ہو جاتا ' بھائی یہ کوئی بڑی گیم لگتی ہے '
کیونکہ یہ دنیا کا اصول ہے....... دنیا کا .......اور آپ دنیاوی مخلوق ہیں

Tuesday, 9 May 2017

By accident

No one is sent by accident to anyone ~A Course in Miracles ☼ Whatever relationships you have attracted in your life at this moment, are precisely the ones you need in your life at this moment. There is a hidden meaning behind all events, and this hidden meaning is serving your own evolution. ~ Deepak Chopra
زندگی میں کوئی بھی حادثاتی طور پر نہیں ملتا یہ موجزات کا کا سفر ہے - یاد رکھو جو بھی اس لمحہ  تمہاری زندگی میں شامل ہے اس کی تمھیں اشد ضرورت ہے ہر صورت حال  کہ پیش آنے کی ایک انجانی وجہ ہوتی ہے اور یہ وجہ تمہاری شخصیت کی  نمو کاکام کر رہی ہے
Omnibus


Thursday, 4 May 2017

بھوک

بھوکا کبھی نہیں جھجھکتا نہ پوچھتا ہے نہ ہی پیاسا  کبھی جھجکتا یا سوچتا ہے شرط صرف واقعی بھوکا پیاسا ہونے کی ہوتی ہے 
لوگوں کی ایک قسم وہ بھی ہوتی ہے جو اتنی نا سمجھ ہے کہ جن کو  پتہ ہی  نہیں چلتا کہ  بھوک لگی ہے یا پیاس بس چھوٹےسے بچے کی طرح روتے رہتے ہیں پریشان بے چین بے سکون زندگی ہونے کے با وجود بھی سمجھ نہیں آتی کے انکو پیاس لگی ہے یا بھوک 
 اور یہ پیاس اور بھوک اپنی اصل پہچان کی ہوتی ہے اصل انسان بن جانے کی پیاس اور بھوک جو صرف اور صرف دانائی ملنے سے بنتا ہے ادراک ملنے سے ورنہ یہ خالی خولی کی علمیت کسی کام کی نہیں ہوتی صرف علم بے چینی پیدا کرتا ہے
پریشانی اضطراب جب تک دانائی اور ادراک حاصل نہ ہو

اور ادراک ملتا ہے علم کو عمل میں بدل دینے سے علم کا عملی اظہار کرنے اور نمونہ بن جانے سے 

بار بار کا عمل بار بار کا عملی اظہار علم کو دھیرے دھیرے دانائی اور ادراک میں بدل دیتا ہے وقت لگتا ہے اور پھر انسان دانائی حاصل کر کے اپنی پیاس اور بھوک مٹا تا چلا جاتا ہے تسکین کہ اس سفر میں اور آگے بڑھتا اور نشو نما پاتا ہے بڑاہو جاتا ہے صرف بوڑھا نہیں ہوتا 

 تسکین  کہ اس سفر کو آسان بنا نے اور رفتار تیز کرنے کی  خاطر بہت جتن  کرنے لگتا ہے اور آخر آخر خالق کو اس کی اس کوشش اس جستجو پہ  پیار آ جاتا ہے اور وہ ایک رہ نما بھیجتا ہے رہنما وہ روحانی رشتہ قائم کرتا ہے کہ جس کی بدولت دانائی اور ادراک تیزی سے اس کو ملنے لگتی ہے وہ طریقے وہ عمل سکھاتا ہے جس سے دانائی کا سفر سہل اور تیز رفتار ہو جاتا ہے اور انسان سہی سمت میں سفر کرنے لگتا ہے 

یہ روحانی رشتہ انسان کو اوپر ہی اوپر لے جاتا ہے کیونکہ  باپ تو انسان کو اوپر سے دنیا میں نیچے لاتا ہے اور روحانی باپ ادراک اور دانائی سے اوپر لے جاتا ہے اور انسان صرف بوڑھا نہیں بڑا ہو جاتا ہے ....بڑا انسان  

سوچو غور کرو کیا بےچینی محسوس ہوتی ہے ؟ بے سکونی اطمینان کا نہ ہونا دانائی کی بھوک اور ادراک کی ؛ پیاس ہے اور اس کو مٹانے کا صرف ایک راستہ ہے..... عمل 

Sunday, 30 April 2017

Thinking


خوشی اس پرہرگز منحصر نہیں کہ تم کون ہو اور تمہارے پاس کیا ہے خوشی کا انحصار  صرف اور صرف تمہاری سوچ پہ ہوتا ہے - بدھا
Happiness does not depend on what you have or who you are, it solely relies on what you think.- Buddha

Saturday, 29 April 2017

Heroic


اپنے ذھن کی پرورش عظیم سوچ سے کرو کیونکہ عظیم اور قابل قدر انسان عظیم اور قابل قدر سوچ سے بنتا ہے
چھوٹی اور گھٹیا سوچ سے نہیں 

Nurture your minds with great thoughts. To believe in the heroic makes heroes-Benjamin Disraeli

Tuesday, 18 April 2017

Friends and Enemies

کبھی دوست دراصل دشمن ہوتے ہیں  اور کبھی دشمن ..دوست - رومی

Friends are enemies sometimes and enemies are friends. Rumi

Omnibus

Thursday, 6 April 2017

If you want to to fly..

اڑنا چاہتے ہو تو وہ سب بوجھ اتار پھینکو جو تمہاری اڑان روکتے ہیں
If you want to fly, give up everything that weighs you down  

Omnibus

Wednesday, 22 March 2017

Knowledge without wisdom

علم بغیر دانائی کے ایسے ہوتا ہے جیسے پانی ریت میں
Knowledge without wisdom is like water in the sand

Omnibus

Thursday, 16 March 2017

Young and Old

"Some people are old at 18 and some are young at 90. Time is a concept that humans created.” —Yoko Ono.
کچھ لوگ ١٨ سال میں بوڑھے ہو جاتے ہیں اور کچھ ٩٠ سال میں بھی جوان ہوتے ہیں ، وقت صرف انسان کا ایجاد کردہ مفروضہ ہے 

Omnibus

Thursday, 2 March 2017

No direction

وقت کمی وجہ نہیں ،  سہی سمت کا تعین نہیں ہوتا ورنہ ہم سب کہ پاس دن میں 24 گھنٹے ہوتے ہیں
Lack of direction, not lack of time, is the problem. We all have twenty-four hour days - Zig Ziglar
Omnibus

Tuesday, 28 February 2017

Empty words

کھوکھلے الفاظ اور لمبی چوڑی تعریفیں الله کو خوش نہیں کر سکتے - اپنے عمل سے اپنا ایمان ظاہر کرو - عبدالستار ایدھی

“Empty words and long praises do not impress God. Show Him your faith by your deeds” 

― Abdul Sattar Edhi

Omnibus

Thursday, 9 February 2017

Bask

دماغ ہمیں اس بات کا یقین دلاتا ہے کہ پہلے ہمیں حاصل کرنا ہے- اس سے قبل کہ ہم مزے بغیر کچھ کیئے ، وہ سب لے کر بیٹھ سکیں جو زندگی ہمیں دینا چاہتی ہے - جوبلکل غلط ہے  
The mind has us believing we must achieve before we can bask in all that life has to give, which is simply untrue


Omnibus

Thursday, 2 February 2017

Long Journey

اور تُو ؟ کب اپنی ذات کی جانب وہ طویل سفر شروع کرے گا ؟ -رومی
“And you ? When will you begin that long journey into yourself ?” Rumi


Tuesday, 31 January 2017

Keep breaking

You have to keep breaking your heart, until it opens. Rumi
اپنے دِل کے توڑتے چلے جاؤ یہاں تک کے وہ کھل جائے- جلال‌الدین محمد رومی

Omnibus

Tuesday, 17 January 2017

A gentleman

ایک شریف اور اچھا آدمی دنیا سے جتنا لیتا ہے اس سے زیادہ لوٹا دیتا ہے- جارج برنارڈ شا
"A gentleman is one who puts more into the world than he takes out." - George Bernard Shaw

Omnibus

Sunday, 8 January 2017

I

پھولوں کا تو عطر بنا
عطر کا پِھر بنا دریا دریا میں پِھر خوب نہا مچھلی جیسے تیرتا جا پِھر بھی تیری بو نہیں جانی  جب تک تیری " میں " نہیں  مرتی
Make scent from flowers and make a river out of it. Dive and swim into that river like a fish. But you would never be able to get rid of the odour you have, until you curb  " I"  from within - Bulleh Shah

Omnibus


Tuesday, 3 January 2017

Four principles

لوگ میری زندگی کے چار اصول جانتے ہیں ، سادگی ، وقت کی پابندی ، محنت اور حکمت و دانائی
 People know that I have adopted four principles in living my life: simple living, punctuality, hard work and prudence. - Abdul Sattar Edhi

Omnibus